دکھائیں کتب
  • 1 حکمائے اسلام حصہ اول (ہفتہ 20 اکتوبر 2018ء)

    مشاہدات:618

    مسلمانوں میں جو حکماء وفلاسفہ پیدا ہوئے ان میں کچھ تو ملحد وبے دین اور اکثر ضعیف العقیدہ تھے۔ یا کم ازکم ان کی مذہبی حالت  بہتر نہیں تھی یہی وجہ  ہے کہ قدیم زمانے میں بھی ان کے سوانح وحالات کی طرف بہت کم مؤرخین نے  توجہ دی۔اس لیے عوام الناس  ان کے حالات سے بالکل ناآشنا رہے ۔قدیم زمانے میں اگرچہ بعض آزاد خیال لوگوں نے ان کے حالات پر چند کتابیں لکھیں  لیکن اولاً تو یہ کتابیں خاص طور ان کے زمانے کے حکماء کے حالات تک محدود ہیں ۔ثانیاً ان کتابوں میں حکمائے اسلام کے ساتھ ساتھ  زیادہ تر حکمائے یونان ، عیسائی  فلاسفہ او راطباء کے نام  مذکور ہیں۔ خالص حکمائے اسلام کے حالات  میں کوئی کتاب نہیں لکھی گئی۔لہذا اس ضرورت کے پیش نظر  مولانا عبد السلام ندوی  نے زیر نظر کتاب ’’ حکمائے اسلام ‘‘ تحریر کی یہ کتاب  دو حصوں میں  ہے ۔مصنف نے اس کتا ب میں  حکمائے اسلام کی ہر قسم کی مذہبی اخلاقی اور فلسفیانہ خدمات کو نمایاں کیا ہے  حصہ اول میں  پانچویں صدی تک  کے حکماء کے حالات مذکور ہیں  اور دوسرے  حصے  میں متوسّطین  ومتاخرین حکمائے اسلام  کے مستند حالات ان  کی علمی خدمات  اور ان کے  فلسفیانہ نظریات کی تفصیل  دی گئی ہے۔(م۔ا) 

  • 2 فلسفہ ہند و یونان (جمعہ 26 اکتوبر 2018ء)

    مشاہدات:540

    ہرایک فلسفی ایک خاص فلسفہ رکھتا ہے اوراپنے سلیقہ، ذوق اورمعلومات کے مطابق خوشی و غم اورمرگ و زیست کی تاویل و تفسیر کرتا ہے اورکوشش کرتا ہے کہ جوکچھ اس کے لیے اچھا یا برا ہے، خواہ موجود ہے یا ہوگا، اس سے آگاہ ہوجائے۔فلسفہ ہند در حقیقت فلسفہ ہنود ہے۔ جو بت پرستی سے وحدانیت تک پہنچتا ہے۔ مفکرین ہند کے افکار انواع و اقسام کے ہیں۔ ہر فکر کی بنیاد فلسفہ قدیم ہے جس میں کہیں خدا کا انکار اور کہیں اثبات ہے۔ پست ترین مذہب اور مہمل ترین فکر سے لے کر بہترین مذہب اور بلند ترین فکر تک یہاں موجود ہے۔ ہر مفکر اپنے رنگ میں مکمل رنگین ہے۔ فلسفہ ہندو ویونان کا بہ نظر غائر مطالعہ کیا جائے تو ان کے تدریجی ارتقاء سے واضح ہوجائے گا  کہ فلسفے نےہر دو  مذکورہ ممالک میں قریباً ایک ہی سی منازل فکر طے کی  ہیں اور ان کی آخری منزل بھی ایک ہی  ہے جہاں پہنچ کی دونوں نے اپنا اپنا سفر ختم کردیا  ہے  اور وہ منزل  ہےالٰہیات جس  سے ہم یہ سمجھ لینے پر مجبور ہوجاتے ہیں کہ یہی آخری منزل ہے  اور اس سے آگے عقل وفکر انسانی  کی رسائی ناممکن ہے۔ زیر نظر کتاب ’’فلسفہ ہندوویونان‘‘ شفیقی عہدی پوری کی تصنیف ہے ۔یہ کتاب  فلسفۂ ہندویونان کےایک مجمل جائزے پر مشتمل ہے۔یہ کتاب اگرچہ ایک مختصر ہے مگر اپنی افادیت کےلخاظ سے بڑی بڑی ضخیم کتب پر بھاری ہے ۔ کیونکہ  اس میں سب کچھ موجود ہے ۔ یہ کتاب  ہند ویونان کےفلسفیانہ افکار وآراء کا ایسا خلاصہ ہے  جو ف...

ایڈوانس سرچ

اعدادو شمار

  • آج کے قارئین: 205
  • اس ہفتے کے قارئین: 3654
  • اس ماہ کے قارئین: 10517
  • کل مشاہدات: 41450744

موضوعاتی فہرست

ای میل سبسکرپشن

محدث لائبریری کی اپ ڈیٹس بذریعہ ای میل وصول کرنے کے لئے ای میل درج کر کے سبسکرائب کے بٹن پر کلک کیجئے۔

رجسٹرڈ اراکین

ایڈریس

        99--جے ماڈل ٹاؤن،
        نزد کلمہ چوک،
        لاہور، 54700 پاکستان

       0092-42-35866396، 35866476، 35839404

       0092-423-5836016، 5837311

       library@mohaddis.com

       بنک تفصیلات کے لیے یہاں کلک کریں